سینیگال کی مقامی کشتی چین افریقہ تعاون کی علامت بن گئی

بیجنگ (کنٹری نیوز)مغربی افریقی ملک سینیگال میں کشتی کا کھیل مقامی طور پر بہت مقبول ہے۔ تاہم، ایک طویل عرصے سے،مقامی لوگوں کو ملک میں کبھی بھی حقیقی ریسلنگ رنگ دیکھنے کو نہیں ملا۔ 22 جولائی 2018 کو چینی صدر شی جن پھنگ اور سینیگال کے صدرمیکی سال نے مشترکہ طور پر سینیگال کے مسابقتی ریسلنگ رنگ پروجیکٹ کی حوالگی کی تقریب میں شرکت کی۔اتوار کے روز چینی میڈ یا کے مطا بق یہ مسابقتی ریسلنگ اسٹیڈیم چینی کاروباری اداروں کی مدد سے بنایا گیا تھا ۔اس سے نہ صرف سینیگالی عوام کے برسوں کے خواب کو پورا کیا گیا بلکہ چین افریقہ دوستی کی بہترین مثال قائم کی گئی۔سینیگال کے وزیر کھیل ماتار با نے اس کی بہت تعریف کی۔ انہوں نے کہا کہ ایک پرانی چینی کہاوت ہے، ” مچھلی دینے کی بجائے مچھلی کو پکڑنے کا ہنر سیکھایا جائے ۔ یہ افریقہ کے لیے چین کی امداد اور چین-افریقہ کے تعاون کا بنیادی تصور بن چکا ہے۔ اس ریسلینگ رنگ کی تعمیر کے دوران، چینی ٹیم نے مقامی ہنر مندوں کو پروان چڑھایا ہے۔
چینی صدر شی جن پھنگ چین-افریقہ تعلقات کی ترقی کو بہت اہمیت دیتے ہیں۔ افریقی ممالک کی ترقی کے لیے چینی صدر کے پرخلوص روئیے کو افریقی ممالک قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔
سینیگال کے صدر میکی سال نے کہا کہ عالمی تعاون کے لیے جناب شی کا وژن “دی بیلٹ اینڈ روڈ” کی تعمیر سے ظاہر ہوتا ہے، یہ ایک عالمی شراکت داری پروگرام ہے جو مختلف ممالک کے لوگوں کو آپس میں جوڑرہا ہے اور بین الاقوامی تبادلوں میں خاص طور پر افریقہ اور چین کے لوگوں کو سہولیات فراہم کررہا ہے۔