عالمی تبدیلیوں، وبا کی وجہ سے عالمی معیشت کی بحالی سست ہے، چینی صدر

بیجنگ (کنٹری نیوز)”عالمی ترقی: مشترکہ مشن اور شراکت” کے موضوع پر  تھنک ٹینک اور  میڈیا کے اعلیٰ سطحی فورم  کا  بیجنگ میں افتتاح ہوا۔ سی پی سی کی مرکزی کمیٹی کے پولیٹیکل بیورو کے رکن اور سی پی سی کی مرکزی کمیٹی کے شعبہ تشہیر کے سربراہ ہوانگ کھن منگ نے افتتاحی تقریب میں شرکت کی،اور  صدر شی جن پھنگ کی طرف سے بھیجا گیا تہنیتی   خط پڑھ کر سنایا ۔منگل کے روز چینی میڈ یا کے مطا بق
صدر شی جن پھنگ نے اپنے خط میں کہا کہ اس وقت    ایک صدی میں آنے والی سب سے بڑی  عالمی تبدیلیوں اور وبا کی وجہ سے ، عالمی معیشت کی بحالی سست ہے، ترقی یافتہ اور ترقی پزیر ممالک کے درمیان    ترقیاتی  فرق مزیدبڑھ گیا ہے۔ پوری دنیا کو ایک مشکل وقت کا سامنا ہے۔   عالمی ترقی کا فروغ انسانوں کا مشترکہ معاملہ ہے۔ اس لئے چین نے عالمی ترقیاتی انیشیٹیو پیش کیا، جس کے مطابق چین ، عوام کو اولین حیثیت دیتے ہوئے تمام ممالک کے ساتھ ، جامعیت، مشترکہ مفادات، جدت ، انسان اور فطرت کی ہم آہنگی کے ساتھ بقائے باہمی کو برقرار رکھتے ہوئے، ترقی کو عالمی ایجنڈے  پر ترجیحی حیثیت دینے کو فروغ دے گا،اقوام متحدہ کے ۲۰۳۰ پائیدار ترقی کے ایجنڈے پر عمل درآمد کو بڑھائے گا اور زیادہ مضبوط، سبز اور مثبت عالمی ترقی کو  فروغ دے گا۔
ہوانگ کھن منگ نے اجلاس سے خطاب کرتےہوئے  نشاندہی کی کہ صدر شی جن پھنگ کے تہنیتی خط میں عالمی ترقی کو فروغ دینے کی صورت حال اور درپیش چیلنجوں کی  وضاحت کی گئی ہے اور عالمی ترقی کے اقدامات کو عملی جامہ پہنانے  کے تصورات اور تجاویز کا واضح طور پر اعلان کیا گیا ہے، اس فورم کو اچھی طرح سے چلانے اور ترقیاتی قوتوں کو اکٹھا کرنے  کے لیے اہم رہنمائی فراہم کی گئی ہے۔
اس فورم کی میزبانی چین کی ریاستی کونسل کے پریس دفتر  نے کی تھی، اور چائنیز اکیڈمی آف سوشل سائنسز، ریاستی کونسل کے ترقیاتی تحقیقی مرکز، اور چائنا میڈیا گروپ  کے تعاون سے فورم کا اہتمام کیا گیا تھا۔ کانفرنس میں دنیا بھر کے 60 سے زائد ممالک، خطوں اور بین الاقوامی تنظیموں کے 200 سے زائد نمائندوں نے آن لائن اور آف لائن شرکت کی۔